fbpx
بھول شائد بہت بڑی کر لی
ہمارا دل سویرے کا سنہرا جام ہو جائے
کہاں آنسوئوں کی یہ سوغات ہو گی
وہ چاندنی کا بدن خوشبوئوں کا سایہ ہے
دوسروں کو ہماری سزائیں نہ دے
کوئی پھول دھوپ کی پتیوں میں
کوئی شام گھر بھی رہا کرو
آنکھوں میں رہا دل میں اُتر کر نہیں دیکھا