fbpx
عشق کہتا ہے کیے عہد کی تجدید کرو
مشق جیسی چاند ماری اور ہے
کشتیاں لڑنی ہوں تو پہلوان ہونا چاہییے
بیشتر کہ صدر کی تقریر ہونی چاہییے
قدم بڑھائے وفائوں کی داستان چلے
جفا ہنس ہنس کے سہہ لینے کی بیتابی نہیں بھولی
وہ ترنم وہ تیری آواز سرگم یاد ہے
خامشی کے بحر میں اُچھلن نہ کوئی کود ہے
جس حسنِ عنایت سے چھنا گوشئہ رضوان