fbpx

وبا کے خلاف ہزاروں غیر ملکیوں کی خدمات، انعام فرانس کی شہریت

Coronavirus in France

Coronavirus in France

پیرس (اصل میڈیا ڈیسک) فرانس میں کورونا وائرس کی عالمی وبا کے خلاف خود کو خطرے میں ڈال کر خدمات انجام دینے والے ہزاروں غیر ملکی کارکنوں کو ترجیحی بنیادوں پر ملکی شہریت دی جا رہی ہے۔ اب تک ایسے چوہتر غیر ملکی فرانسیسی شہریت حاصل کر چکے ہیں۔

پیرس سے ملنے والی رپورٹوں میں ملکی وزارت داخلہ کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ حکومت نے فرانس میں مقیم اور صحت یا اس سے متعلقہ پیشہ وارانہ شعبوں میں خدمات انجام دینے والے ان ہزاروں غیر ملکی کارکنوں کو ترجیحی بنیادوں پر مقامی شہریت دینے کا فیصلہ کیا ہے، جو کورونا وائرس کی وبا سے پیدا ہونے والے بحرانی حالات پر قابو پانے کی کوششوں میں اپنا انتھک کردار ادا کر رہے ہیں۔

فرانسیسی وزارت داخلہ کے مطابق ایسے غیر ملکیوں کو ملکی شہریت دینے کا عمل ترجیحی بنیادوں پر تیز تر کیا جا چکا ہے۔ ایک سرکاری بیان کے مطابق وزرات داخلہ نے اس سال ستمبر میں ایسے تمام غیر ملکیوں کو دعوت دی تھی کہ اگر وہ کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں اپنے اپنے شعبے میں ‘سرگرمی سے فعال‘ ہیں، تو وہ حکام کو اپنے لیے ‘فاسٹ ٹریک شہریت‘ کی درخواستیں دے سکتے ہیں۔

اس حکومتی اقدام کے نتیجے میں صحت یا صحت سے متعلقہ شعبوں میں کام کرنے والے ہزارہا غیر ملکی کارکنوں میں سے تقریباﹰ تین ہزار تارکین وطن نے اپنے لیے ترجیحی بنیادوں پر فرانس کی شہریت کی درخواستیں جمع کرائی تھیں۔

شہریت سے متعلقہ امور کی جونیئر فرانسیسی وزیر مارلیں شیاپا کے دفتر کی طرف سے جاری کردہ بیان کے مطابق ان تین ہزار کے قریب غیر ملکیوں میں سے 74 کو تیز رفتار دفتری کارروائی کے بعد فرانس کی شہریت دی جا چکی ہے۔ اس کے علاوہ مزید 693 غیر ملکی کارکنوں کے فرانسیسی شہریت دینے کا عمل اپنی تکمیل کے بہت قریب ہے۔ باقی درخواست دہندگان کو بھی ترجیحی بنیادوں پر اگلے سال کے شروع میں ملکی شہریت دے دی جائے گی۔

وزارت داخلہ کے بیان کے مطابق، ”ان غیر ملکی کارکنوں میں براہ راست صحت کے شعبے میں کام کرنے والے پیشہ ور افراد، صفائی کرنے والی خواتین، بچوں کی دیکھ بھال کرنے والے تارکین وطن اور چیک آؤٹ سٹاف کے طور پر کام کرنے والے وہ غیر ملکی بھی شامل ہیں، جنہوں نے کورونا وائرس کی وبا کے باوجود اپنے فرائض کی انجام دہی جاری رکھتے ہوئے فرانسیسی قوم کے ساتھ اپنی محبت کا ثبوت دیا۔ اس لیے فرانسیسی جمہوریہ کی بھی یہ ذمے داری تھی کہ وہ بھی آگے بڑھتے ہوئے ایسے غیر ملکی کارکنوں کی خدمات کا اعتراف کرے۔‘‘

یرس حکومت کے اس فیصلے کے تحت تارکین وطن سے متعلق ملکی محکمے کے حکام اس قانونی مدت کا دورانیہ بھی بہت کم کر چکے ہیں، جس کے بعد کوئی غیر ملکی فرانس کی شہریت کی درخواست دے سکتا ہے۔ پہلے کسی بھی غیر ملکی کے لیے شہریت کی درخواست دینے سے قبل پانچ سال تک فرانس میں قانونی طور پر مقیم رہنا لازمی تھا۔

اب لیکن یہ کم از کم قانونی عرصہ نصف سے بھی کم کر کے دو سال کر دیا گیا ہے، جس کا مقصد کووڈ انیس کی وبا کے ‌خلاف ‘شاندار خدمات‘ انجام دینے والے تارکین وطن کی ملکی شہریت کے حصول کے لیے حوصلہ افزائی کرنا ہے۔

گزشتہ برس مختلف ممالک سے تعلق رکھنے والے تقریباﹰ ایک لاکھ بارہ ہزار غیر ملکیوں نے فرانسیسی شہریت حاصل کی تھی۔ ان میں سے 48 ہزار سے زائد ایسے تارکین وطن تھے، جنہوں نے فرانس میں قانونی قیام کی کم از کم مدت اور دیگر شرائط پوری کرنے کے بعد مقامی شہریت حاصل کی تھی۔ یہ تعداد 2018ء کے مقابلے میں 10 فیصد کم تھی۔