fbpx

بھارت کا نواں ڈرون مار گرایا: آئی ایس پی آر

Drone

Drone

اسلام آباد (اصل میڈیا ڈیسک) پاکستانی فوج نے بھارت کا ایک مبینہ جاسوسی ڈرون مار گرانے کا دعویٰ کیا ہے۔ فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق رواں برس پاکستان کی طرف سے بھارت کا یہ نواں ڈرون ’کواڈ کاپٹر‘ گرایا گیا ہے۔

آئی ایس پی آر کی طرف سے اتوار کی رات دیر گئے اس واقعے کی اطلاع موصول ہوئی جس میں کہا گیا کہ بھارت کا یہ مبینہ جاسوسی ڈرون کشمیر کے متنازعہ علاقے میں گھس آیا تھا۔ مقامی میڈیا کے مطابق بھارتی جاسوس ڈرون کو لائن آف کنٹرول پر تتہ پانی سیکٹر میں مار کر تباہ کیا گیا۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ رواں برس پاک فوج کی طرف سے مار گرایا گیا یہ 9 واں بھارتی ڈرون ہے۔ خیال رہے کہ 5 جون کو بھی پاک فوج نے بھارتی جاسوس ڈرون خانجر سیکٹر میں مار گرایا تھا۔

اتوار کی شب پاکستانی فوج کی اس کارروائی کی تفصیلات بتاتے ہوئے آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ یہ بھارتی کواڈ کوپٹر، ایک چھوٹی سر ویلینس مشین یا نگرانی مشین تھا جو لائن آف کنٹرول )ایل او سی( کے پاکستانی حصے کی طرف 850 میٹر اندر گھس آیا تھا۔ ایل او سی کشمیر کو دو حصوں میں تقسیم کرتی ہے اور اس کے اطراف ایک طرف پاکستانی اور دوسری طرف بھارتی فوج اپنی اپنی عمل داری والے حصوں کی نگرانی کرتی ہیں۔

آئی ایس پی آر کا کہنا تھا کہ یہ بھارتی کواڈ کوپٹر، ایک چھوٹی سر ویلینس مشین یا نگرانی مشین تھا۔

گزشتہ برس اگست میں بھارت کی طرف سے نئی دہلی کے زیر انتظام کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت کو ختم کرنے کے بعد سے لائن آف کنٹرول پر مسلح جھڑپوں میں واضح اضافہ ہوا ہے۔ رواں ماہ کے آغاز میں بھارتی بارڈر فورسز نے کشمیر کی متنازعہ وادی کے دیہات کو نشانہ بنایا تھا۔ اس سے چند روز قبل اسی علاقے میں بھارت اور چین کی فوج کے مابین سنگین جھڑپیں ہوئی تھیں جس کے بعد بیجنگ اور نئی دہلی کے مابین بھی غیر معمولی کشیدگی پیدا ہو گئی۔

2020 ء میں بھارت کی طرف سے لائن آف کنٹرول پر اب تک جنگ بندی کی 1,487 خلاف ورزیاں ہو چکی ہیں جن میں 13 شہری ہلاک اور 106 زخمی ہوئے۔ جنوبی ایشیا کی دو جوہری طاقتوں پاکستان اور بھارت کے مابین اب تک ہونے والی تین جنگوں میں سے دو ہمالیہ کی وادی کشمیر میں ہی لڑی گئیں۔