fbpx

اسرائیلی فوجی اڈے کے نزدیک 2 فلسطینی نوجوان شہید، ایک زخمی

Israeli Soldiers

Israeli Soldiers

غزہ (اصل میڈیا ڈیسک) اسرائیل میں فوجی اہلکاروں نے آرمی بیس کے نزدیک فلسطینی نوجوانوں پر گولیاں برسادیں جس کے نتیجے میں 2 نوجوان شہید اور ایک شدید زخمی ہوگیا۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق مغربی کنارے پر اسرائیلی فوجی اڈے کے نزدیک اہلکاروں کی فائرنگ سے دو فلسطینی نوجوان شہید اور ایک زخمی ہوگیا۔ ان نوجوانوں نے فوجی اڈے میں داخل ہونے کی کوشش کی تھی۔

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ جینن کے علاقے میں قائم سلیم ملٹری بیس میں 3 فلسطینی نوجوانوں نے داخل ہونے کی کوشش کی جس پر اہلکاروں نے نوجوانوں پر اندھا دھند گولیاں برسادیں۔
اسرائیلی پولیس کا کہنا ہے کہ نوجوان مسلح تھے اور فوجی اڈے میں داخل ہونے میں ناکامی پر مرکزی دروازے پر فائرنگ کردی تاہم جوابی فائرنگ میں دو نوجوان مارے گئے اور ایک شدید زخمی ہے۔

اسرائیل میں وزیراعظم نیتن یاہو نے ووٹرز کی ہمدردی حاصل کرنے کے لیے فلسطینیوں پر مظالم بڑھائے اور دو سال میں چار بار الیکشن میں کامیابی کے باوجود وہ حکومت بنانے میں ناکام رہے ہیں، ہر بار وہ سیاسی اتحاد بناتے اور ہر بار ناکامی منہ چڑھاتی۔

اس سیاسی بحران کے دوران اسرائیلی فوج کے پُرتشدد واقعات میں اضافہ ہوا جب کہ رمضان کے ماہ مقدس میں بھی مسلمانوں کو بیت المقدس میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی گئی۔