fbpx

مقبوضہ کشمیر پر بھارت کے ناجائز قبضے کیخلاف آج یومِ سیاہ منایا جا رہا ہے

Kashmir Black Day

Kashmir Black Day

کشمیر (اصل میڈیا ڈیسک) مقبوضہ جموں کشمیر پر بھارت کے ناجائز قبضے کے 73 برس مکمل ہونے پر کنٹرول لائن کے دونوں اطراف اور دنیا بھر میں مقیم کشمیری آج یومِ سیاہ منا رہے ہیں۔

کُل جماعتی حریت کانفرنس سمیت وادی کی دیگر تنظیموں نے آج مقبوضہ وادی میں مکمل ہڑتال کی کال دی ہے اور گھروں پر سیاہ پرچم لہرائے جا رہے ہیں۔

یوم سیاہ کے موقع پر وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ آج کا دن انسانی تاریخ کے ایک تاریک باب کو اجاگر کرتا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ جموں و کشمیر پر بھارت کا غیرقانونی قبضہ بین الاقوامی تنازع ہے، اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق تنازع کشمیر کے پرامن حل کے لیے کام کرے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان حق خود ارادیت کے حصول تک کشمیریوں کی ہر ممکن مدد جاری رکھے گا، بھارت نے 27 اکتوبر 1947 کو کشمیریوں کی خواہشات کے برعکس جموں و کشمیر میں اپنی فوج اتار کر اس پر ناجائز قبضہ کیا تھا۔

برسلز میں بھارتی سفارتخانے کے سامنے احتجاج
دوسری جانب کشمیر پر بھارتی قبضے کے خلاف آج برسلز میں بھارتی سفارتخانے کے سامنے احتجاج ہوگا، بلجیئم کے دارالحکومت میں احتجاجی مظاہرے کا اہتمام کشمیرکونسل یورپی یونین کررہی ہے۔

چیئرمین کشمیر کونسل یورپی یونین علی رضا سید کا کہنا ہے کہ بھارت 7 دہائیوں سے کشمیریوں پر ظلم کر رہا ہے، عالمی برادری مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالیوں کو روکے۔