fbpx

پاکستان نے نیوزی لینڈ کو آخری ٹی ٹوئنٹی میں شکست دیدی

Pakistan vs New Zealand

Pakistan vs New Zealand

نیپئر (اصل میڈیا ڈیسک) پاکستان نے تیسرے اور آخری ٹی ٹوئنٹی میچ میں نیوزی لینڈ کو 4 وکٹ سے شکست دے دی تاہم وہ سیریز 1-2 سے ہار گئے۔

نیپئر میں کھیلے گئے تیسرے اور آخری ٹی ٹوئنٹی میچ میں نیوزی لینڈ نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے مقررہ 20 اوورز میں 7 وکٹ کے نقصان پر 173 رنز بنائے جس کے جواب میں پاکستان نے محمد رضوان کی زبردست بیٹنگ کی بدولت مطلوبہ ہدف 2 گیندیں قبل 6 وکٹوں کے نقصان پر پورا کیا۔

قومی ٹیم کی جانب سے محمد رضوان اور حیدر علی نے پچھلے دو ٹی ٹوئنٹی کے مقابلے میں ٹیم کو 40 رنز پراعتماد آغاز فراہم کیا، حیدر علی 11 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے جس کے بعد پچھلے میچ میں 99 رنز کی ناقابل شکست اننگز کھیلنے والے محمد حفیظ بیٹنگ کے لیے آئے اور 41 رنز کی اننگز کھیل کر پویلین واپس لوٹے۔

محمد رضوان نے ذمہ دارانہ بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے نصف سنچری اسکور کی اور وکٹ پر ڈٹے رہے، وہ آخری اوور میں 59 گیندوں پر 89 رنز کی اننگز کھیل کر آؤٹ ہوئے جس میں 3 چھکے اور 10 چوکے شامل ہیں۔

مڈل آرڈر بیٹسمین خوشدل شاہ بھی 13 رنز کے مہمان ثابت ہوئے ، فہیم اشرف بھی صرف 2 رنز بنانے کے بعد پویلین واپس لوٹ گئے جب کہ کپتان شاداب خان پہلی ہی گیند پر آؤٹ ہوئے۔ پاکستان کو جیت کے لیے 3 گیندوں پر 3 رنز درکار تھے جب افتخار احمد نے چھکا لگاکر ٹیم کو فتح سے ہمکنار کروایا۔

زبردست کارکردگی پر محمد رضوان کو مین آف دی میچ سے نوزا گیا جب کہ ٹم سیفرٹ کو مین آف دی سیریز دیا گیا۔

اس سے قبل ٹاس قومی ٹیم کے کپتان شاداب خان نے جیت کر میزبان ٹیم کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی۔ مارٹن گپٹل اور ٹم سیفرٹ نے ٹیم کو 40 رنز کا جارحانہ آغاز فراہم کیا تاہم گپٹل 19 رنز بنانے کے بعد پویلین واپس لوٹ گئے جس کے بعد کپتان کین ولیمسن بیٹنگ کے لیے آئے لیکن فہیم اشرف نے انہیں بھی جلد واپس پویلین بھیج دیا، وہ صرف 1 رنز بناسکے۔

پاکستانی بولرز نے ابتدائی میچوں کے مقابلے میں اچھی بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے کیوی بلے بازوں کو کھل کر کھیلنے کا موقع نہیں دیا، پچھلے دونوں میچوں کے ہیرو ٹم سیفرٹ بھی 35 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے، گلین فلپس 31 رنز کی اننگز کھیلنے میں کامیاب ہوئے۔

جمی نیشام صرف 2 رنز کے مہمان ثابت ہوئے البتہ ڈیون کونوئے نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے نصف سنچری مکمل کی اور آخری اوورز میں جارحانہ بلے بازی کرتے ہوئے ٹیم کو اچھا ٹوٹل فراہم کیا۔ وہ 45 گیندوں پر 63 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔

قومی ٹیم کی جانب سے فہیم اشرف نے 3، شاہین آفریدی اور حارث رؤف نے 2،2 وکٹیں حاصل کیں۔

قومی ٹیم میں کپتان شاداب خان، محمد رضوان، حیدر علی، محمد حفیظ، حسین طلعت، خوشدل شاہ، افتخار احمد ، فہیم اشرف، محمد حسنین، شاہین شاہ آفریدی اور حارث رؤف شامل تھے۔

دوسری جانب کیوی ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی اور ان کی ٹیم کین ولیمسن کی قیادت میں ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہے۔ مارٹن گپٹل، ٹم سیفرٹ، ڈیون کونوے، گلین فلپس، جیمز نیشام، کائل جمیسن، اسکاٹ کوگلین، آئش سودی، ٹم ساوتھی، اور ٹرینٹ بولٹ۔