fbpx

امریکا کی نظریں یمن میں دو سینیر کمانڈروں پر، گرفتاری پر 11 ملین ڈالر کا انعام مقرر

Qasim al-Raymi

Qasim al-Raymi

امریکا (اصل میڈیا ڈیسک) امریکا نے یمن میں القاعدہ کے دو سینیر کمانڈروں کے بارے میں معلومات فراہم کرنے پر 11 ملین ڈالر کے انعام کا اعلان کیا ہے۔

امریکی وزارت خزانہ نے دنیا بھر میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں‌ ملوث القاعدہ کے یمن میں چوٹی کے دو کمانڈروں کے بارے میں درست معلومات دینے پر انعامات کا اعلان کیا ہے۔

یمن میں قاسم الریمی کی ہلاکت کے بعد جزیرۃ العرب میں القاعدہ کو ایک اور کاری ضرب لگائی گئی ہے۔ الریمی کی ہلاکت کے بعد امریکی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ امریکا دو دہشت گردوں کی گرفتاری کی کوشش کررہا ہے۔

وزارت خارجہ کی طرف سے جاری کردہ بیان کی نقل وزارت خارجہ کے آفیشل اکائونٹ پر القاعدہ کمانڈر سعد بن عاطف العولقی کے ساتھ پوسٹ کی گئی ہے۔بیان میں سعد العولقی کے بارے میں معلومات فراہم کرنے پر 6 ملین ڈالر کا انعام مقرر کیا گیا ہے۔

ایک دوسری ٹویٹ میں القاعدہ کمانڈر خالد سعید باطرفی کی تصویر کے ساتھ اس کی گرفتاری پر 50 لاکھ ڈالر کا انعام رکھا گیا ہے۔ باطرفی جزیرۃ العرب میں القاعدہ کمانڈر ہے۔ اس کا تعلق یمن کے حضر موت کے علاقے سے ہے اور وہ القاعدہ کی جزیرۃ العرب میں مجلس شوریٰ کا سابق رکن بھی ہے۔

یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب حال ہی میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بیان میں یمن میں ایک کارروائی کے دوران جزیرۃ العرب میں القاعدہ کمانڈر قاسم الریمی کی ہلاکت کی تصدیق کی تھی۔